9 سالہ بچے نے انوکھا قلم ایجاد کرلیا –

نئی دہلی: مقبوضہ کشمیر سے تعلق رکھنے والے ایک 9 سالہ بچے نے ایسا قلم ایجاد کیا ہے جو لکھنے والے کو آگاہ کرے گا کہ اس کے لکھے گئے الفاظ کی تعداد کتنی ہے۔

9 سالہ بچے کی یہ ایجاد بھارت میں وزیر اعظم ہاؤس میں منعقدہ انوویشن اینڈ انٹر پرینورشپ فیسٹیول میں پیش کی گئی۔

طالب علم مظفر احمد خان نے جو تیسری جماعت کا طالب علم ہے، بتایا کہ اسے اس اچھوتے قلم کا خیال اس وقت آیا جب امتحان میں اس کے مارکس کم آئے۔

مظفر کا کہنا تھا کہ میں نے جواب کے لیے درکار الفاظ سے کم الفاظ لکھے تھے جس کی وجہ سے میرے مارکس کم آئے۔ ’تب ہی میرے ذہن میں خیال آیا کہ کوئی ایسی شے ہونی چاہیئے جو اس بارے میں مجھے آگاہ کرے‘۔

مظفر نے اس قلم کا خیال بھارت کے محکمہ سائنس و ٹیکنالوجی کے تحت چلنے والے ادارے نیشنل انوویشن فاؤنڈیشن کو پیش کیا جہاں کے ماہرین نے اس کے خیال کو حقیقت میں ڈھالنے میں مدد دی۔

ننھے طالب عالم کے ایجاد کردہ اس پین میں ایک چھوٹا سا ایل سی ڈی مانیٹر نصب ہے جو لکھے گئے الفاظ کی تعداد بتاتا رہتا ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email



Source link

اپنا تبصرہ بھیجیں