غیر ملکی سرمایہ کاری میں 69 فیصد اضافہ –

کراچی: پاک چین اقتصادی راہداری کے باوجود پاکستان میں براہ راست بیرونی سرمایہ کاری میں قابل ذکر اضافہ نہ ہوسکا تاہم مجموعی غیر ملکی سرمایہ کاری کا حجم 69 فیصد بڑھ گیا۔

تفصیلات کے مطابق اسٹیٹ بینک کے جاری کردہ ڈیٹا کے مطابق رواں مالی سال کے ابتدائی نو ماہ میں جولائی 2017 سے مارچ 2018 تک پاکستان میں 2 ارب 9 کروڑ ڈالر کی براہ راست بیرونی سرمایہ کاری ریکارڈ کی گئی۔

سرمایہ کاری میں گزشتہ مالی سال کے اسی عرصے میں ہونے والی براہ راست بیرونی سرمایہ کاری کے مقابلے میں صرف 4.4 فیصد اضافہ دیکھا گیا۔ گذشتہ مالی سال کے نو ماہ میں 2 ارب 5 کروڑ ڈالر کی برہ راست بیرونی سرمایہ کاری ہوئی تھی۔

اسٹیٹ بینک کے مطابق مارچ میں پاکستان میں 15 کروڑ 27 لاکھ ڈالر کی براہ راست بیرونی سرمایہ کاری دیکھی گئی جبکہ گzشتہ سال مارچ میں 31 کروڑ 83 لاکھ ڈالر کی براہ راست بیرونی سرمایہ کاری کی گئی تھی۔

رواں مالی سال کے ابتدائی نو ماہ کے دوران ملک میں مجموعی غیر ملکی سرمایہ کاری کا حجم 4 ارب 45 کروڑ ڈالر رہا جس میں 69 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔

اسٹیٹ بینک کے مطابق پاکستان اسٹاک ایکسچینج سے غیر ملکی سرمایہ کاروں کی جانب سے سرمایہ نکالنے کے رحجان میں کمی دیکھنے میں آئی ہے۔

رواں مالی سال جولائی سے مارچ کے دوران غیر ملکی سرمایہ کاروں نے شیئرز بیچ کر 9 کروڑ 33 لاکھ ڈالر کا سرمایہ اسٹاک مارکیٹ سے نکال لیا جبکہ گذشتہ مالی سال کے نو ماہ میں غیر ملکی سرمایہ کاروں نے 34 کروڑ 63 لاکھ ڈالر کا سرمایہ نکالا تھا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Source link

اپنا تبصرہ بھیجیں