شام پر امریکی حملے تشویش ناک ہیں‘ انتونیو گٹریس us-attacks-on-syria-are-worried-antonio-guterres

نیویارک : اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل انتونیو گتریس نے شام پر امریکا اور اتحادیوں کے فضائی حملوں پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ خطے کی صورت خراب ہوتی جارہی ہے اور اس کو بہتری کی طرف لانے کا کوئی نظر نہیں آرہا.

تفصیلات کے مطابق شام میں گذشتہ روز امریکا اور اتحادیوں کی جانب سے فوجی کارروائی کے بعد اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل انتونیو گتریس نے عربی خبر رساں ادارے کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا ہے کہ مشرق وسطیٰ کا خطہ سرد جنگ کی حالت میں مبتلہ ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ شام پر امریکا اور اتحادیوں کے حملے کے بعد اقوام متحدہ کے اراکین ممالک اطمینان اور صبر و تحمل سے کام لیں اور فضائی حملوں کے جواب میں کسی بھی ایسے حملے سے پرہیز کریں، جو عالمی امن و استحام کو مزید خطرے میں ڈالے۔

انہوں نے یہ بات العربیہ نیوز کے ساتھ خصوصی انٹرویو دیتے ہوئے کہی کہ شامی حکومت کے اتحادی صبر تحمل کا مظاہرہ کریں ورنہ خطے کی صورت حال مزید خرابی کی طرف جائے گی اور شامی عوام کی مشکلات میں بھی اضافہ ہوگا۔

اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل نے کیمیائی حملوں پر شدید افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ کیمیکل ہتھیاروں کا استعمال کرنے والوں کے لیے احتساب کا کوئی طریقہ موجود نہیں، شام اور مشرق وسطیٰ کی موجودہ صورت حال کا حل فوجی کارروائی ہرگز نہیں ہے۔


نئے انداز اور انتقام کے ساتھ سرد جنگ کا دوبارہ آغاز ہوگیا ہے‘ انتونیو گتریس


ان کا کہنا تھا کہ امریکا کے اتحادی فرانس نے انسانیت کی تذلیل اور انسانیت سوز جرائم میں ملوث ممالک کی حمایت میں پیش کی جانے والی قراردادوں کو کم کرنے کے لیے بہترین تجویز پیش کی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ انہوں نے سلامتی کونسل کے اجلاس سے کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال کی روک تھام اور ذمہ داروں کا تعین کرنے کے لیے ایک تحقیقاتی ٹیم بنانے کے مطالبے پر اتفاق کیا ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Source link

اپنا تبصرہ بھیجیں