ریلوے کی ملازمت کے لیے ڈھائی کروڑ سے زائد امیدوار سامنے آگئے: India

ممبئی: بھارت میں بے روزگاری عروج پر پہنچ گئی حکومت کی جانب سے ریلوے کی ملازمت کے لیے امیدواروں کی بھرتی کا اعلان کیا گیا تو ڈھائی کروڑ سے زائد امیدوار سامنے آگئے۔

تفصیلات کے مطابق بھارت میں سرکاری ادارہ ریلوے کی ملازمت کے لیے بھرتیاں جاری ہیں تاہم جب حکومت کی جانب سے اشتہارات شائع کرائے گئے تو جواب میں تقریباً ڈھائی کروڑ (پچیس ملین) سے زائد لوگوں نے درخواستیں جمع کرائیں۔

حکومت کی جانب سے جن پوسٹوں میں بھرتی کے لیے اشتہارات شائع کیے گئے ہیں ان میں انجن ڈرائیور، ریلوے پروٹیکشن فورس، ریلوے اسپیشل پروٹیکشن فورس، کارپینٹر اور ریلوے ٹریک انسپکٹر شامل ہیں۔

لکھنو: بھارت کی ریاست اترپردیش میں ٹرین کی بوگیاں الٹنے سے23 افراد ہلاک اور 50 سے زیادہ زخمی ہوگئے۔

بھارتی ریلوے نے ایک ماہ قبل مذکورہ پوسٹوں میں ملازمت کے لیے آن لائن درخواستوں کا سلسلہ شروع کیا ہے تاہم پہلے نوے ہزار پوسٹوں کے لیے درخواستیں طلب کی گئیں لیکن گزشتہ روز یعنی 29 مارچ کو ان میں مزید بیس ہزار کا اضافہ کرنے کا اعلان کیا گیا ہے جس کے بعد یہ تعداد بڑھ کر اب ایک لاکھ دس ہزار ہوچکی ہے۔

دوسری جانب بھارتی ریلوے کے وزیر پیوش گائل نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری اپنے بیان میں کہا ہے کہ ریلوے میں نوجوان ملازمین کی شمولیت کو ترحیح دے رہے ہیں، جس کے لیے بڑی تعداد میں درخواستیں موصول ہورہی ہیں۔

بھارت میں نسلی فسادات پھوٹ پڑے، پرتشدد مظاہرے، نظام زندگی مفلوج

مقامی تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ بھارت میں ملازمت کے لیے اتنی بڑی تعداد میں لوگوں نے درخواستیں جمع کرائیں اس سے اس بات کا اندازہ لگایا جاسکتا ہے کہ بھارت میں بے روزگاری انتہا کو چھو رہی ہے اور لوگ سرکاری ملازمت کو زیادہ ترجیح دیے رہے ہیں۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Source link

اپنا تبصرہ بھیجیں