امریکی صدر نے محکمہ ویٹران کے سیکریٹری کو بھی عہدے سے برطرف کردیا

واشنگٹن: امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اہم سیکریٹری برائے ویٹرن امور کے ان کے عہدے سے برطرف کردیا ہے، ڈیوڈ شُلکِن کو امریکی صدر کی پالیسیوں سے شدید اختلاف تھا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق وائٹ ہاؤس میں عہدوں سے متعلق مستقل غیر معمولی تبدیلیاں دیکھنے میں آرہی ہیں۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے حکومت کے اہم سیکریٹری برائے ویٹرن امور(سابق فوجیوں کی طبی امداد کا محکمہ) کو ان کےعہدے سے ہٹا دیا ہے، جس کے باعث ٹرمپ انتظامیہ کو شدید مشکلات کا سامنا کرے پڑے گا۔

غیرملکی خبر رساں ادارے کے مطابق ڈاکٹر ڈیوڈ شُلکِن امریکی حکومت کے چوتھے اہم عہدے دار جہنیں رواں ماہ عہدے سے برطرف کیا گیا ہے، انہیں ٹرمپ کی ملکی و غیر ملکی صورتحال کے حوالے سے اختیار کی جانے والی جارحانہ پالیسیوں سے شدید اختلاف تھا۔

امریکی صدر ٹرمپ نے سابق فوجیوں کے محکمہ برائے طبی امداد کے سیکریٹری کو ایسے وقت میں برطرف کیا ہے جب امریکا کے 2 لاکھ سے زائد فوجی دنیا کے 180 ممالک میں مختلف کارروائیوں میں مصروف ہیں۔ تو دوسری طرف خود امریکا کی اندرونی امن و امان اورمعیشت کی صورتحال بھی ٹھیک نہیں ہے۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے ٹویٹ کا عکس

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر پیغام دیا کہ سابق فوجیوں کے محکمہ برائے طبی امداد کے سیکریٹری ڈاکٹر شُلکِن کو ان کے عہدے سے شبکدوش کرکے ایڈمیرل رونی جونسن کو سیکریٹری مذکورہ محکمے کا قلمدان سونپ دیا گیا ہے۔

خیال رہے کہ اسی ماہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے اہم اقتصادی مشیر گیری کوہن اور مشیر برائے قومی سلامتی جنرل مک ماسٹر اپنے عہدے سے استعفیٰ دے چکے ہیں، دونوں امریکی رہنماؤں کو صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی اقتصادی پالیسیوں سے اختلاف تھا۔

دوسری جانب امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ڈاکٹر ڈیوڈ شُلکِن سے پہلے امریکی وزیر خارجہ ریکس ٹلرسن کو بھی عہدے سے برطرف کرچکے ہیں۔ ان کی جگہ مائیکپومپیو کو وزارت کا قلمدان سونپ دیا تھا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں

Print Friendly, PDF & Email

Source link

اپنا تبصرہ بھیجیں